چینی وزیردفاع نے بھارت کو سرحدی کشیدگی کا ذمہ دار قرار دے دیا

چین کے وزیردفاع جنرل وی فینگ اور بھارتی وزیردفاع راج ناتھ کے درمیان مذاکرات میں دونوں ممالک کے درمیان امن و استحکام کے قیام اور سرحدوں پر کشیدگی کم کرنے پر اتفاق ہو گیا ہے۔

تاہم مذاکرات کے فوراً بعد چینی وزیردفاع نے بھارت کو سرحدی کشیدگی کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے اعلان کیا کہ ان کا ملک اپنی سرزمین کے ایک ایک انچ کا دفاع کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی کی ذمہ داری بھارت پر عائد ہوتی ہے، چینی فوج ملک کی علاقائی سلامتی کے تحفظ کی صلاحیت بھی رکھتی ہے اور اعتماد بھی۔

جنرل وی فینگ کا کہنا تھا کہ بھارت اپنی فرنٹ لائن دستوں کو مضبوط بنانے اور دیگر انتظامی امور میں کام جاری رکھ سکتا ہے مگر وہ اشتعال انگیزی اور جان بوجھ کر معاملات کو اچھالنے سے پرہیز کرے، انہوں نے کہا کہ بھارت کو منفی معلومات بھی نہیں پھیلانی چاہئیں۔

ماسکو میں ہونے والی شنگھائی کانفرنس میں سائیڈ لائن پر دونوں ممالک کے وزرائے دفاع کے مذاکرات ہوئے، چین بھارت سرحدی کشیدگی کے بعد اگرچہ فوجی اور سفارتی سطح پر بات چیت ہوتی رہی مگر یہ پہلی اعلیٰ سطحی ملاقات تھی جس میں دو طرفہ کشیدگی کے خاتمے کے متعلق گفتگو ہوئی۔

دوسری جانب امریکی صدر ٹرمپ نے بھی بھارت چین تنازعہ حل کرانے کے لیے تعاون کی پیشکش کی ہے، ان کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک کے درمیان صورتحال انتہائی خراب ہے، ہم سے جو کچھ ممکن ہو سکا ہم کریں گے۔

ٹیگ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site