اپوزیشن کا گوجرانوالہ میں جلسہ، کس لیڈر نے کیا کہا؟

گزشتہ رات گوجرانوالہ میں ہونے والے اپوزیشن کے جلسے میں مختلف سیاسی رہنماؤں نے تقاریر کیں جن میں حکومت پر تنقید کی گئی۔

سب سے زیادہ اہم خطاب سابق وزیراعظم نواز شریف کا تھا جنہوں نے لندن سے ویڈیو لنک کے ذریعے شرکاء سے بات کی۔

نواز شریف کے اسٹیبلشمنٹ پر الزامات

انہوں نے اپنے طویل خطاب میں جہاں حکومت کو اور وزیراعظم عمران خان کو تنقید کا شکار بنایا وہیں اسٹیبلشمنٹ پر بھی الزامات عائد کیے۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے عوام کو مار دیا ہے، آج عوام کے چولہے بجھ چکے ہیں، بیروزگاری عروج پر ہے، ادویات تک کی قیمتیں لوگوں کی پہنچ سے باہر ہو گئی ہیں۔

نواز شریف نے کہا کہ عوام کا ووٹ چوری ہوا ہے، اس میں قصوروار عمران خان ہے یا انہیں لانے والے جنہوں نے ہاری ہوئی پی ٹی آئی کو جتوایا۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ اب ہم اصل قصورواروں کو سامنے لانے سے نہیں ڈریں گے، ہم گائے بھینسیں نہیں ہیں، باضمیر لوگ ہیں اور اپنا ضمیر کبھی نہیں بیچیں گے۔

اپنے خطاب میں نواز شریف کا کہنا تھا کہ ملک میں دو متوازی حکومتوں کا ذمہ دار کون ہے؟ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ اور ان کی اہلیہ کے ساتھ جو کچھ ہوا، اس کا ذمہ دار کون ہے؟

انہوں نے اپنی تقریر میں اسٹیبلشمنٹ کو مخاطب کر کے کہا کہ یہ سب آپ کا کیا دھرا ہے، نواز شریف کو غدار کہنا ہے تو ضرور کہیں، اشتہاری کہنا ہے تو ضرور کہیں، جائیداد ضبط کرنی ہے تو ضرور کریں، لیکن ہم ووٹ کو عزت دلوا کر رہیں گے۔

جعلی حکمران اپنے انجام کو پہنچنے والے ہیں، مولانا فضل الرحمان

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ اور پاکستان ڈیموکریٹک موومٹ (پی ڈی ایم) کے صدر مولانا فضل الرحمٰن نے کہا کہ ہم پاکستان کی سیاست کو قوم کے ہاتھوں میں دیکھنا چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عوام کا سمندر اب کراچی، کوئٹہ، لاہور اور پشاور میں آئے گا، اب حکومت کے اوسان خطا اور ہمت جواب دے چکی ہے۔ جعلی حکمران اپنے انجام کو پہنچنے والے ہیں۔

مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان آزاد جموں و کشمیر کا حصہ ہے، سپریم کورٹ اس حوالے سے فیصلہ دے چکی ہے، اسے پاکستان کا پانچواں صوبہ بنانے کی مخالفت کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم پاکستان کی سیاست کو قوم کے ہاتھوں میں دیکھنا چاہتے ہیں، انہوں نے وفاق پر الزام لگایا کہ وہ ساحلی حدود کو صوبوں کے قبضے سے نکالنے کیلیے قانون سازی کرنے جا رہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہماری کسی سے کوئی ذاتی دشمنی نہیں لیکن یہ محسوس ہونا چاہیے کہ پاکستان مغربی آقاؤں کا نہیں بلکہ پاکستانیوں کا ہے۔

مولانا فضل الرحمان نے الزام عائد کیا کہ موجودہ پارلیمنٹ عوام کی نمائندہ پارلیمنٹ نہیں ہے، یہ عالمی اسٹیبلشمنٹ کی سازشوں اور دباؤ کے تحت لائی گئی پارلیمنٹ ہے اور آج بھی ان کے ایجنڈے پر قانون سازی کر رہی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آج پوری اپوزیشن متحد ہے اور یہ تاثر ہرگز نہیں ہونا چاہیے کہ کوئی بھی سیاسی قوت کسی مفاہمت کے انتظار میں ہے یا وہ کسی سیاسی مفاہمت سے فائدہ اٹھانا چاہتی ہے۔

اب عمران خان کے گھبرانے کا وقت آ گیا ہے، بلاول بھٹو

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پاکستان کی معیشت تاریخ کی بدترین دور سے گزر رہی ہے، گندم اگانے والے کسان کے پاس روٹی نہیں، تبدیلی یہ ہے پاکستان میں آج تاریخی مہنگائی ہے اور تاریخی بیروزگاری ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے وعدہ کیا تھا کہ قرض نہیں لیں گے، 2 سال میں تاریخ کا سب سے زیادہ قرضہ لیا، پی ٹی آئی کرپشن کے نام پر سیاسی انتقام لے رہی ہے،0 ہم چاہتے ہیں کہ کرپشن کا خاتمہ ہو۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ یہی وہ پنجاب تھا جہاں شہید بھٹو نے پوری اسلامی امہ کو اکٹھا کیا تھا، نالائق سلیکٹڈ کشمیر پر بھی مسلم امہ کو اکٹھا نہیں کر سکا، مودی نے کشمیر پر حملہ کر دیا، عمران خان مگرمچھ کے آنسو بہاتے رہے۔

انہوں نے اپنے خطاب میں الزام عائد کیا کہ وزیراعظم نے کہا تھا کشمیریوں کے سفیر بنیں گے لیکن کلبھوشن کے وکیل بن گئے، اگر ہمارا کوئی جاسوس انڈیا میں پکڑا کیا جاتا تو کیا حال ہوتا؟

انہوں نے کہا کہ پارلیمان کو ربڑ اسٹمپ بنا دیا گیا  توسڑکوں پر آنےپر مجبور ہوئے، ہم 1973کے آئین کی بالادستی کے لیے جدوجہد کررہے ہیں، بلوچ اور پشتون کامریڈز ہمارے ساتھ ہیں، ہم سب ایک پیج پر ہیں اور اب عمران خان کے گھبرانے کا وقت آچکا ہے۔

عمران خان یاد رکھیں کہ صفحہ پلٹتے دیر نہیں لگتی، مریم نواز

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے اپنے خطاب میں وزیراعظم کو مخاطب کر کے کہا کہ یاد رکھیں صفحہ پلٹتے دیر نہیں لگتی۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کی کرپشن باہر آئے گی تو لوگ کانوں پر ہاتھ لگائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ آج ’جعلی حکومت‘ کے خاتمے کی شروعات ہیں۔

ٹیگ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site
اپوزیشن کا گوجرانوالہ میں جلسہ، کس لیڈر نے کیا کہا؟ is highly popular post having 1 Twitter shares
Share with your friends
Powered by ESSB