ہونٹوں، چہرے کی خوبصورتی کے لیے انجکشن پر پابندی پر غور

کون سی پاکستانی شخصیات نے چہرے کی سرجری کرائی ہے؟

برطانیہ میں 18 سال سے کم عمر کے نوجوانوں کے ہونٹوں پر فلرز اور چہرے کی خوبصورتی کیلئے خطرناک فیشل انجکشنز لگوانے پر پابندی عائد کرنے پر غور کیا جا رہا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق برطانوی سیاست دانوں کی جانب سے نوجوانوں کے خطرناک فیشل انجکشنز اور لِپ فلرز لگوانے پر پابندی کا مطالبہ کیا جا رہا ہے، ان کا کہنا ہے کہ ان کاسمیٹکس پروسیجر سے نوجوانوں کو انفیکشنز، ٹشو ڈیتھ اور اندھا ہونے کا خطرہ لاحق ہو سکتا ہے۔

کنزرویٹو پارلیمنٹیرین لورا ٹروٹ 18 سال سے کم عمر کے نوجوانوں کو لِپ فلرز اور انجیکشنز لگوانے کو جرم قرار دینے والے بل کی پیروی کر رہی ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ یہ کاسمیٹکس پروسیجر نوجوانوں کی زندگیوں کو تباہ کر رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ایک سروے کے مطابق برطانیہ میں 16 سال سے کم عمر کے ایک لاکھ کے قریب نوجوان کاسمیٹکس پروسیجر کراتے ہیں۔

اراکین پارلیمنٹ نے نوجوانوں کے درمیان کاسمیٹکس پروسیجر کے عام ہونے کی وجہ سوشل میڈیا کو ٹھہرانے کے ساتھ ساتھ اس بل کی حمایت بھی کی ہے۔

چہرے کی سرجری کرانے والی پاکستانی شخصیات

واضح رہے کہ پاکستان کے متعدد اداکار و اداکارائیں بھی اپنے چہروں کی سرجری کرا چکے ہیں جن میں سعدیہ امام ، مہوش حیات ،فواد خان ، حدیقہ کیانی، عائشہ خان ، ماہ نور بلوچ، نور بخاری ، ونیزا احمد ، مشی خان ، نادیہ حسین ، سارہ لورین ، آمنہ حق ، فزا علی ، ثنا سرفراز، حمائمہ ملک اور سدرہ بتول شامل ہیں ۔

ٹیگ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site