محمود اچکزئی کا پنجاب کو طعنہ دینا ن لیگ کو نقصان دے گا، رؤف کلاسرا

لاہور کے لوگ پی ڈی ایم کے جلسے میں کیوں نہیں آئے؟

سینئر تجزیہ کار اور صحافی رؤف کلاسرا کا کہنا ہے کہ محمود خان اچکزئی کی پنجابیوں کو طعنہ دینے والی بات سے نون لیگ اور مجموعی طور پر پی ڈی ایم کو نقصان ہو گا جبکہ اس سے محمود اچکزئی کو سیاسی فائدہ ہو گا۔

اپنے وی لاگ میں رؤف کلاسرا نے کہا ہے کہ لاہور میں پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کا جلسہ زیادہ بڑا نہیں تھا جس کی وجہ سے مسلم لیگ (ن) کی صفوں میں خاموشی پھیلی ہوئی ہے جبکہ حکومتی عہدیداران خوش ہیں۔

رؤف کلاسرا نے کہا کہ عمران خان کی حکومت لاہور کے جلسے سے قبل دباؤ محسوس کر رہی تھی کیونکہ اس بات کا امکان تھا کہ لاہوری بڑی تعداد میں باہر نکلیں گے اور اپوزیشن ایک بڑا شو کرنے میں کامیاب ہو جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ جب تک عمران خان نے لاہور میں بڑا جلسہ نہیں کیا تھا وہ اقتدار کے کھیل کے سنجیدہ امیدوار نہیں سمجھے جاتے تھے، 2011 کے بڑے جلسے کے بعد قومی سیاست میں ان کا قد بلند ہوا تھا۔

ان کا تجزیہ ہے کہ لاہور جلسے کے بعد حکومتی رہنماؤں کے لب ولہجے میں اعتماد بھر گیا ہے، وہ دھڑادھڑ بیانات دے رہے ہیں، ٹوئٹر پر متحرک ہیں اور پریس کانفرنسز کر رہے ہیں۔

لاہور سے لوگ باہر کیوں نہیں نکلے؟

رؤف کلاسرا کے مطابق لاہور کے لوگ بہت کم تعداد میں جلسے میں شریک ہوئے ہیں، اس کی ایک وجہ تو سردیوں کا موسم بتایا جا رہا ہے، اس کے ساتھ ساتھ کورونا وبا بھی ایک وجہ تھی۔

انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے پاس کہنے کو کوئی نئی بات نہیں تھی، وہ گزشتہ جلسوں میں آرمی چیف اور آئی ایس آئی کے سربراہ کے نام لے کر تنقید کر چکے تھے، اس کے بعد اگلا مرحلہ کوئی نہیں تھا۔

ان کا کہنا ہے کہ لوگ ایک ہی گفتگو بار بار نہیں سن سکتے، یہی وجہ ہے کہ عمران خان کے انٹرویوز کی بھی وہ ریٹنگ نہیں آتی جو اپوزیشن میں ان کے ہوتے ہوئے آیا کرتی تھی کیونکہ وہ بھی ایک قسم کی باتیں دہراتے رہتے ہیں۔

رؤف کلاسرا نے کہا کہ جو ویڈیوز سامنے آ رہی ہیں ان سے لگتا ہے کہ ن لیگی رہنماؤں کی تقاریر کے دوران ہی لوگ جلسہ گاہ چھوڑ کر جا رہے ہیں۔

عمر شیخ فیکٹر نے کیا کام دکھایا؟

رؤف کلاسرا کے مطابق ان کی پاکستان تحریک انصاف کے رہنماؤں سے بات ہوئی ہے اور انہوں نے بتایا کہ عمر شیخ نے سی سی پی او لاہور بننے کے بعد مسلم لیگ (ن) کے بڑے بڑے قبضہ گروپ اور گینگز پر ہاتھ ڈالا ہے جس کی وجہ سے نون لیگ کا اثر کم ہوا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پی ٹی آئی رہنماؤں کے مطابق لاہور پولیس میں بڑے پیمانے پر تبادلے اور تقرریاں کی گئی ہیں، مسلم لیگ (ن) کے حمایتی ایس ایچ اوز کو ایک طرف کر دیا گیا ہے، یہ بھی ایک وجہ بنی ہے۔

محمود اچکزئی اور پنجاب، پشتون معاملہ

رؤف کلاسرا نے کہا ہے کہ محمود اچکزئی نے کل لاہور کے جلسے میں پنجابیوں کو انگریزوں کا ایجنٹ ہونے کا طعنہ دے ڈالا، یہ ایک کمزور بال تھی جس پر آج حکومتی رہنماؤں نے خوب کھیلا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ فواد چوہدری اور شہباز گل نے پریس کانفرنس کی اور اس موضوع پر نون لیگ کو خوب لتاڑا، یہ تاریخ کے دیے ہوئے زخم ہیں جنہیں محمود اچکزئی نے پھر سے تازہ کر دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں پنجاب اور پختون کی ایک کشمکش جاری رہتی ہے، نئی نسل اس کے بارے میں نہیں جانتی اور نہ ہی اسے میڈیا میں زیادہ اچھالا گیا ہے لیکن خاموشی سے یہ کشمکش موجود رہتی ہے۔

رؤف کلاسرا نے اس موضوع پر اپنا ذاتی تجربہ بھی بیان کیا جو بہت اہم اور دلچسپ ہے۔

وہ کہتے ہیں کہ ماضی میں افغان حملہ آور موجودہ پختونخوا سے گزر کر پنجاب پر حملے کرتے تھے اور لوٹ مار کر کے واپس چلے جاتے تھے۔

انہوں نے کہا کہ پہلی بار معاملہ اس کے برعکس ہوا، انگریزوں کے پنجاب پر قبضہ کرنے سے پہلے 80، 90 سال تک پنجاب کے سکھوں اور پختونوں کی تین بڑی جنگیں ہوئیں جن میں مہاراجہ رنجیت سنگھ کی فوجوں کو کامیابی ہوئی۔

ان کا کہنا تھا کہ اس دوران پختونوں کا وہ زعم ختم ہو گیا کہ انہیں کوئی شکست نہیں دے سکتا، رنجیت سنگھ نے پشاور اور جمرود پر قبضہ کر کے موجودہ افغانستان کی طرف رخ کیا جس پر انہوں نے باجگزار کی حیثیت میں خراج دینا قبول کر لیا۔

رؤف کلاسرا کا کہنا ہے کہ رنجیت سنگھ نے ملتان پر بھی قبضہ کیا تھا اور وہاں کے نواب مظفرخان کو شہید کر دیا تھا، یہی وجہ ہے کہ جنوبی پنجاب کے لوگ رنجیت سنگھ کو برا سمجھتے ہیں جسے کئی پنجابی اپنا ہیرو گردانتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ محمود اچکزئی نے انہی تین جنگوں کا حوالہ دے کر شکوہ کیا کہ پنجاب کے لوگ پختونوں کے بجائے انگریزوں کے ساتھ مل گئے تھے۔

ان کا کہنا ہے کہ لاہور جلسے میں پنجابیوں کو ایسا طعنہ دینا مسلم لیگ (ن) کے لیے بہت نقصان دہ ہو گا جبکہ محمود اچکزئی کے لیے فائدہ مند ہو گا کیونکہ ان کے علاقے کے لوگ اس بات پر خوش ہوں گے کہ انہوں نے پنجاب کے دل میں کھڑا ہو کر پنجابیوں کو سنوائی ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
محمود اچکزئی کا پنجاب کو طعنہ دینا ن لیگ کو نقصان دے گا، رؤف کلاسرا is highly popular post having 5 Twitter shares
Share with your friends
Powered by ESSB

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site