جوبائیڈن کی فتح کا باقاعدہ اعلان، 20 جنوری کو عہدہ سنبھالیں گے

امریکی الیکٹورل کالج کی طرف سے جوبائیڈن کی فتح کو تسلیم کر لیا گیا ہے جس کے بعد امریکی سیاست میں پیدا ہونے والے تناؤ کا خاتمہ ہو گیا ہے۔

الیکٹورل کالج کے 538 رائے دہندگان نے 3 نومبر کو ہونے والے انتخابات میں ووٹروں کی جانب سے انہیں دیئے گئے مینڈیٹ کی پیروی کی، ڈیموکریٹک امیدوار جوبائیڈن کو 306 ووٹ ملے جبکہ ان کے حریف ریپلکن امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کو صرف 232 ووٹ مل سکے۔

انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے والے صدر جوبائیڈن اور نائب صدر کمالا حارث 20 جنوری کو اپنا عہدہ سنبھالیں گے، جبکہ 6 جنوری کو کانگریس کے خصوصی مشترکہ اجلاس میں انتخابی ووٹوں کی سیل اتاری جائے گی۔

الیکٹورل کالج میں فتح کی تصدیق ہونے کے چند منٹ بعد جوبائیڈن نے تقریر کی اور اپنے حریف پر زور دیا کہ وہ جمہوریت پر حملے کرنے سے باز آ جائیں۔

یاد رہے امریکہ میں سالوں سے یہ روایت رہی ہے کہ انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے والا صدارتی امیدوار انتخابات کے روز رات کو اپنی قوم کو فاتح کی حیثیت سے خطاب کرتا ہے۔

جوبائیڈن کا کہنا تھا کہ امریکہ میں سیاستدان اقتدار میں نہیں آتے بلکہ عوام انہیں اقتدار میں لاتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جمہوریت کی شمع اس قوم میں بہت پہلے جل چکی تھی اور اب کچھ نہیں ہو سکتا، نہ ہی وبا اور نہ ہی اختیارات کا ناجائز استعمال اس شمع کو بجھا سکتا ہے۔

واضح رہے ڈونلڈ ٹرمپ جو عام طور پر سیاسی پیشرفتوں پر رد عمل دینے میں کوئی وقت ضائع نہیں کرتے تھے، انہوں نے الیکٹورل کالج کے فیصلے پر کوئی رائے پیش نہیں کی ہے۔

 جوبائیڈن نے اپنی پہلی تقریر میں کہا کہ وہ تمام امریکیوں کے صدر ہوں گے، اور وہ جاری تنازعات کو ختم کرنے کی بھرپور کوشش کریں گے۔

جو بائیڈن نے ملک بھر میں دائر درجنوں مقدمات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ انتہائی اقدام ہے جو ہم نے پہلے کبھی نہیں دیکھا، ایک ایسا اقدام جس نے عوام کی حکمرانی کا احترام کرنے سے انکار کیا، قانون کی حکمرانی کا احترام کرنے سے انکار کیا اور ہمارے آئین کا احترام کرنے سے انکار کیا۔

انہوں نے سپریم کورٹ کے متفقہ فیصلے پر خوشی کا اظہار کیا کہ عدالتوں نے ڈونلڈ ٹرمپ کو واضح پیغام دیا کہ وہ ہماری جمہوریت پر غیرمعمولی حملے کا حصہ نہیں بنیں گے۔

جوبائیڈن نے اپنی تقریر کے اختتام پر امریکیوں سے اپیل کی کہ وہ انتخابی تنازع کو پس پشت ڈال کر کورونا وائرس کے خلاف متحد ہو جائیں جو پورے ملک میں پھیل رہا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site