31 جنوری سے پہلے درمیانی راستہ نکل آئے گا، شیخ رشید

وفاقی وزیرداخلہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ وزیراعظم مستعفی ہوں گے اور نہی ہی اپوزیشن استعفے دے گی، 31 جنوری سے پہلے درمیانی راستہ نکل آئے گا۔

ہم نیوز کے پروگرام ‘پاکستان ٹونائٹ’ کے میزبان ثمر عباس کو انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کی تحریک پر وزیراعظم عمران خان  اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ رابطے میں ہیں۔

نوازشریف کی واپسی کے متعلق سوال پر شیخ رشید کا کہنا تھا کہ سورج مغرب سے طلوع ہو سکتا ہے مگر نواز شریف اور اسحاق ڈار وطن واپس نہیں آئیں گے۔

سینیٹ الیکشن کے بارے میں انہوں نے کہا کہ یہ انتخابات فروری کے آخری ہفتے کرا دیں گے، حکومتی اتحادی بھی انتخابات میں وزیراعظم کے ساتھ کھڑے ہوں گے۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ سابق صدر آصف علی زرداری کے کیسز کراچی شفٹ ہو گئے تو پیپلز پارٹی کچھ نہیں کرے گی کیونکہ ان کا مطالبہ تسلیم کر لیا گیا ہوگا۔

شیخ رشید نے تسلیم کیا کہ نیب کی ترامیم پر مفتاح اسماعیل کی بات ٹھیک ہے، پارٹیوں سمیت تمام اسٹیک ہولڈرز مان گئے تھے صرف عمران خان نہیں مانے۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ ابھی تک فیصلہ نہیں ہوا کہ پی ڈی ایم کے لانگ مارچ اور استعفوں سے کیسے نمٹنا ہے۔ 6 مہینے تک حکومت استعفوں کو لٹکا سکتی ہے۔ پنجاب میں پرویزالٰہی بھی ایسا ہی کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کو مشیر داخلہ شہزاد اکبر نہیں بلکہ میں دیکھوں گا۔ کرپشن کے معاملے پر جہاں شہزاد اکبر کو ایف آئی اے کی ضرورت ہوگی انہیں مدد ملےگی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site