پی اے سی ارکان اور نیشنل بینک بورڈکے چیئرمین زبیر سومرو کے درمیان نوک جھونک

اسلام آباد (عمران مگھرانہ سے ) پی اے سی ارکان اور نیشنل بینک بورڈکے چیئرمین زبیر سومرو کے درمیان نوک جھونک ۔پبلک اکاؤنٹس کمیٹی میں چیئرمین نیشنل بینک بورڈزبیر سومرو نے ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شرکت کی۔چیئرمین پی اے سی رانا تنویر نے کہا کہ آپ کے والد اسپیکر بھی رہے ہیں۔ میں آپ کی بہت عزت کرتا ہوں۔انہوں نے مزید کہا کہ آپ کے والد اسپیکر بھی رہے ہیں پھر بھی آپ نہیں سمجھتے کہ پارلیمنٹ کوئی چیز ہے۔ جس پر رکن پی اے سی نور عالم خان نے کہا کہ ان کے والد اسپیکر رہے ہوں گے، انہیں تو کچھ علم نہیں ہے۔جس پر زبیر سومرو نے کہا کہ ان کے والد کو اس معاملے میں نہ لے کر آئیں۔چیئرمین پی اے سی رانا تنویر نے بغیر اجازت بولنے پر زبیر سومرو کی سرزنش کر تے ہوئے کہا کہ میں نے آپ کی بات سنی، درمیان میں ہم بولے؟ ارکان پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے کہا کہ نیشنل بینک کی کون سی کرپشن ہے جسے چھپایا جا رہا ہے۔رکن کمیٹی نور عالم خان نے کمیٹی کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ پی اے سی نیشنل بینک بورڈ کے خلاف وزیراعظم کو خط لکھے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کو خط لکھیں کہ باربار کہنے کے باوجود نیشنل بینک آڈٹ کروانے سے انکاری ہے۔رکن کمیٹی سینیٹر طلحہ محمود نے سوال اٹھایا کہ یہ آڈٹ نہ کروانے پر ضد کیوں کر رہے ہیں؟ رکن کمیٹی ریاض فتیانہ نے کہا کہ وزارت خزانہ کی ذمہ داری ہے پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے احکامات پر عمل کروائے۔نیشنل بینک کے بورڈ کو نوٹیفائی بھی وزارت خزانہ کرتی ہے۔وزارت خزانہ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے احکامات پر عمل در آمد کروانے کے لیے بورڈ کو ڈی نوٹیفائی کرسکتی ہے۔چیئرمین پی اے سی نے کہا کہ بات بڑھے گی تو دور تلک جائے گی، تحریک استحقاق بھی پیش ہو گی۔وزارت خزانہ نیشنل بینک کا آڈٹ کروائے۔

About Post Author

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
پی اے سی ارکان اور نیشنل بینک بورڈکے چیئرمین زبیر سومرو کے درمیان نوک جھونک is highly popular post having 1 Twitter shares
Share with your friends
Powered by ESSB

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site