عمران خان بجٹ اجلاس کے دوران کیا کرتے رہے؟

اسلام آباد (عمران مگھرانہ سے ) پی ٹی آئی حکومت نے اپنا تیسرا بجٹ پیش کر دیا۔قومی اسمبلی بجٹ اجلاس میں وزیر اعظم عمران خان، اپوزیشن لیڈر شہباز شریف اور بلاول زردای حاضر اور دیگر اپوزیشن جماعتوں کے رہنما حاضر تھے۔ اپوزیشن ارکان اسمبلی نے نعروں اور شور شرابے سے ایوان کو سر پر اٹھا لیا۔گلی گلی میں شور ہے۔۔

عمران خان چور ہے، اپوزیشن مسلسل نعرے بازی کرتی رہی۔ وزیرخزانہ شوکت ترین نے جیسے ہی بجٹ پیش کرنا شروع کیا تو اپوزیشن نے شور شرابہ کرنا شروع کر دیا۔ اپوزیشن نے بجٹ کتابوں سے ہی ڈیسکوں کو بجانا شروع کر دیا۔ اپوزیشن کی طرف سے مسلسل نعرے بازی کی جاتی رہی۔ ایوان گو نیازی گو کے نعروں سے گونجتا رہا۔ اپوزیشن کے نعروں کے مقابلے میں حکومتی ارکان اسمبلی خاموش رہے۔وزیر خزانہ شوکت ترین نے ہیڈ فون لگا کربجٹ تقریر جاری رکھی۔

اپوزیشن ارکان اسمبلی نے پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے۔ اپوزیشن کی خواتین ارکان اسمبلی پلے کارڈز لے کر اسمبلی میں گھومتی رہیں۔اسپیکر قومی اسمبلی نے اپوزیشن جماعتوں سے کہا کہ اپنی خواتین ارکان اسمبلی کو اپنے حصہ میں بلا لیں۔انہوں نے مزید کہا کہ تمام ممبران اپنے حصہ میں رہیں۔اسپیکر اسد قیصر اپوزیشن سے اپنی اپنی نشستوں پر رہنے کی بار بار اپیل کرتے رہے۔وزیر اعظم عمران خان بجٹ سیشن کے دوران تسبیح کرتے رہے۔

اپوزیشن کے مسلسل شور شرابے کی وجہ سے وزیر اعظم عمران خان ہیڈ فون لگا کر وزیر خزانہ شوکت ترین کی تقریر سنتے رہے۔بجٹ کی کاپی اٹھا کر عمران خان بجٹ تقریربھی پڑھتے رہے۔ اپوزیشن کے شور شرابے اور نعروں پر عمران خان مسکراتے رہے۔جیسے ہی بجٹ تقریر ختم ہوئی وزیر اعظم عمران خان اپنی نشست سے اٹھ کر شوکت ترین کے سامنے جا کھڑے ہوئے۔وزیر اعظم عمران خان کی موجودگی کے باوجود حکومتی اور اتحادی ارکان اسمبلی کی مکمل حاضری نہ تھی۔اپوزیشن کے ارکان اسمبلی کی بھی تعداد کم رہی۔

About Post Author

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site