بجٹ منظوری کے بغیر پنجاب رینجرز کو 30 کروڑ روپے دیے جانے کا انکشاف

قومی اسمبلی میں جمعہ کے روز پیش کیے گئے بجٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ کرتار پور راہداری کی حفاظت کے لیے پنجاب رینجرز کو 30 کروڑ روپے ادا کیے گئے تھے، اس رقم کی سالانہ بجٹ میں منظوری نہیں دی گئی تھی۔

کرتارپور کورویڈو کی دینا بھر میں تعریف کی گئی تھی اور وہ پاکستان نے 9 ماہ کے ریکارڈ وقت میں مکمل کر کے دنیا کو حیران کر دیا تھا۔

بھارت اور دنیا بھر کے سکھوں نے حکومت پاکستان کے اس غیرمعمولی قدم کو بہت سراہا تھا۔ اس منصوبے کو آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی حمایت حاصل تھی اور انہوں نے دو سال قبل بھارتی سیاستدان اور کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو کو عمران خان کے وزیراعظم بننے کی حلف برداری کی تقریب میں بتایا بھی تھا۔

جب پچھلے سال نومبر میں اس کا نارووال میں افتتاح ہوا تھا تو پوری دنیا سے سکھوں نے شرکت کی تھی۔ اس کی سیکیورٹی پاکستان رینجرز کے حوالے کی گئی تھی اور اس کام کے لیے اس ادارے کو تیس کروڑ روپے فراہم کیے گئے تھے۔

یہ رقم بھی سپلمنڑی گرانٹ کی شکل میں جاری کی گئی تھی کیونکہ جب یہ منصوبہ مکمل ہوا اس وقت سیکیورٹی کا یہ بجٹ پارلیمنٹ سے منظور نہیں ہوا تھا۔ اب اسمبلی اس سپلمنڑی بجٹ کی منظوری دے گی۔

ٹیگ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site