وقار یونس کو اپنے کیریئر میں کس واقعہ پر افسوس اور پچھتاوا ہے؟

پاکستان کے سابق فاسٹ بالر اور موجود بالنگ کوچ وقار یونس نے انکشاف کیا ہے کہ ان کے کیریئر کا سب سے افسوس ناک واقعہ انجری کے باعث 1992 کے ورلڈ کپ سے باہر ہونا تھا۔

اس ورلڈ کپ میں گرین شرٹس نے عمران خان کی کپتانی میں فیورٹ انگلیڈ کو شکست دے کر ورلڈ کپ اپنے نام کیا تھا بدقسمتی سے وقار ایک وارم اپ سیشن میں ورلڈ کپ ٹورنامنٹ سے ایک ہفتہ قبل زخمی ہو گئے تھے۔

وسیم اکرم اور وقار یونس کے درمیان محبتوں بھری دوستی دشمنی میں کیسے بدل گئی؟

پاکستان کے 6 کھلاڑی مجھے مارنے آئے تھے، شعیب اختر کا انکشاف

انہوں نے بتایا کہ یہ ٹورنامنٹ میرے لیے اچھا نہیں تھا، میں ورلڈ کپ سے ذرا پہلے کمر میں سٹریس فریکچر کی وجہ سے زخمی ہو گیا تھا، میں ورلڈ کپ کھیلنے والی ٹیم کے ساتھ تھا لیکن کمر میں تکلیف کے باعث کھیل نہ سکا بلکہ ورلڈ کپ کے کافی عرصہ بعد تک چل نہیں سکتا تھا۔

48 سالہ وقار یونس کے مطابق وہ زخمی ہونے سے پہلے پاکستانی اسکواڈ کے بہترین کھلاڑی تھے۔ انہوں نے کہا کہ یہ شاید سب سے زیادہ خراب وقت تھا کیونکہ میں بہترین کھلاڑی تھا اور کیریئر کی عمدہ بالنگ کر رہا تھا، اس وقت پاکستان ورلڈ کپ جیتنے کے لیے فیورٹ تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان ورلڈ کپ جیتا تو میرے لیے وہ لمحہ اتنا خوش کن نہیں تھا کیونکہ میں فاتح ٹیم کا ممبر نہیں تھا۔

انہوں نے بتایا کہ جب پاکستان کی ٹیم وطن وآپس آئی تو میں خوش تھا اور اس وقت کے وزیراعلیٰ کے ساتھ ٹیم کا استقبال کرنے کے لیے گیا تھا، اس وقت میرا احساسات ملے جلے تھے لیکن میں زیادہ خوش تھا کیونکہ پاکستان نے ورلڈ کپ جیتا تھا۔

وقار یونس نے بتایا کہ میرے اس احساس کو بھانپ لیا گیا اور مجھے اٹھا کر ٹرک پر بٹھا دیا اور بہت پیار اور احترام دے دیا گیا

ٹیگ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site