کورونا کی تین نئی علامات، سائنسدانوں نے خبردار کر دیا

سائنسدانوں نے خبردار کیا ہے کہ کورونا کی تین نئی علامات سامنے آ گئی ہیں، عوام کو اس حوالے سے محتاط ہو جانا چاہیئے۔

اب تک کورونا کی علامات میں کھانسی، بخار، تھکاوٹ، جسم میں درد، سر درد، گلے کا دکھنا اور سونگھنے یا چکھنے کی صلاحیت ختم ہونا شامل تھیں۔

کورونا کی علامات پر وسیع پیمانے پر کی گئی تحقیق کے نتائج سامنے آ گئے

کیا ڈاکٹر کورونا کا غلط علاج کر رہے ہیں؟ نئی تحقیق سامنے آ گئی

یو ایس سینٹرز فار ڈیزیز کنٹرول (سی ڈی سی) نے اب سرکاری طور پر ناک بہنا اور دم گھٹنا، متلی اور اسہال کو کورونا وائرس کی تین نئی علامات کے طور پر رجسٹر کر لیا ہے۔

سی ڈی سی کا کہنا ہے کہ یہ علامات وائرس لگنے کے 2 سے 14 دنوں کے اندر نمودار ہو سکتی ہیں۔

ڈاکٹر مریم سٹاپرڈ کا کہنا ہے کہ کورونا کے آدھے مریضوں میں اسہال یا دیگر معدے کے مسائل رپورٹ ہوئے ہیں تاہم ابھی تک یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ کیا کورونا وائرس براہ راست اس کا باعث بنتا ہے یا بالواسطہ طور پر معدے اور آنتوں کے افعال کو متاثر کرتا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ چین اور امریکہ میں کورونا کی دیگر علامات بھی سامنے آئی ہیں جن میں دورہ پڑنا، غنودگی طاری ہونا اور ذہنی حالت نارمل نہ رہنا شامل ہیں جن سے اندازہ ہوتا ہے کہ وائرل انفیکشن دماغ کو بھی متاثر کرتی ہے۔

ٹیگ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site
کورونا کی تین نئی علامات، سائنسدانوں نے خبردار کر دیا is highly popular post having 2 Twitter shares
Share with your friends
Powered by ESSB