قومی اسمبلی نے بجٹ 2020-21 کی منظوری دے دی

قومی اسمبلی نے چند ترامیم کے بعد بجٹ 2020-21 کی منظوری دے دی، اس سے قبل بجٹ کی شق 9 کے معاملے پر ووٹنگ ہوئی جس میں حکومت نے 119 کے مقابلے میں 160 ووٹ حاصل کیے۔

بجٹ منظوری کے آخری مرحلے پر اپوزیشن نے ووٹ پر اصرار نہیں کیا کیونکہ اسے مختلف شقوں کے معاملے پر ووٹنگ میں شکست ہو چکی تھی۔

بجٹ سیشن کے دوران وزیراعظم عمران خان قومی اسمبلی پہنچے تو حکومت ارکان نے بینچز بجا کر اور نعرے لگا کر ان کا استقبال کیا۔

بل پاس ہونے کے بعد اسد عمر نے ٹویٹ کی کہ گزشتہ کئی دن سے حزب اختلاف کے بلند دعوے اور کچھ میڈیا کے سنسنی خیز تجزیوں کے باوجود نتیجہ یہ نکلا کہ حکومت کی 29 ووٹ کی اکثریت اس سال بڑھ کر 41 ہو گئی۔

انہوں نے تمام ساتھیوں اور تحریک انصاف کے ورکرز کو مبارکباد دی۔

بجٹ اجلاس کے دوران پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے وزیراعظم کی کورونا وبا کے حوالے سے کمزور پالیسی پر شدید تنقید کی اور ان سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کو پاس دو آپشن ہیں، یا تو معیشت تباہ کرنے پر قوم سے اور ایوان سے معافی مانگیں یا پھر وہ استعفی دیں اور کسی ذمہ دار شخص کو حکومت سنبھالنے کا موقع دیں۔

ٹیگ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site