اسپتالوں میں کورونا مریضوں کی آمد میں بڑی کمی

وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر نے کہا ہے کہ اسپتالوں میں کورونا مریضوں کی آمد میں واضح کمی دیکھی جا رہی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ حال ہی میں ٹیسٹوں کی تعداد میں اضافہ کیا گیا ہے اس کے باوجود اسپتالوں میں مریض کم آ رہے ہیں، اس سے قبل روزانہ کے ٹیسٹ کم ہو کر 20 ہزار تک پہنچ گئے تھے تاہم اب ان میں اضافہ کر کے 25 ہزار کر دیا گیا ہے۔

وفاقی وزیر کے مطابق سندھ حکومت کی جانب سے پوری طرح فیڈ بیک سامنے نہیں آیا لیکن باقی تینوں صوبوں نے مریضوں کی آمد میں کمی کی تصدیق کی ہے۔

کورونا کی تین نئی علامات، سائنسدانوں نے خبردار کر دیا

پاکستان میں کورونا کیسز میں مسلسل کمی سے امید جاگ اٹھی

کورونا کی ویکسین تیار ہونے کے بعد بھی ایک رکاوٹ باقی رہے گی، بل گیٹس

ڈان اخبار سے بات کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ وائرس کے پھیلاؤ کو ماپنے کے چار پیرامیٹرز، روزانہ کی بنیاد پر کورونا مریض، اسپتالوں میں داخل ہونے والے متاثرین، وینٹی لیٹرز پر موجود مریض اور اموات کی تعداد ہوتے ہیں۔

اسد عمر کا کہنا تھا کہ ان چاروں پیرامیٹرز میں کمی دیکھنے میں آ رہی ہے جو ایک مثبت علامت ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں نے پنجاب کی وزیرصحت ڈاکٹر یاسمین راشد سے بات کی ہے اور انہوں نے بھی تصدیق کی ہے کہ اسپتالوں میں مریضوں کی آمد میں کمی واقع ہوئی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ پیر کے روز این سی او سی کے اجلاس کے دوران ڈاکٹر فیصل سلطان نے بتایا کہ وہ اپنے گھر کے باہر موجود موبائل ٹیسٹنگ وین کے ساتھ روزانہ مریضوں کا ہجوم دیکھا کرتے تھے لیکن گزشتہ کئی روز سے وہاں شاذونادر ہی کوئی ٹیسٹ کرانے آتا ہے۔

اسد عمر نے کہا کہ انہیں اس پر بہت خوشی ہے تاہم یہ خدشہ بھی موجود ہے کہ کیسز میں کمی کے باعث لوگ ایس او پیز پر عمل درآمد کرنا چھوڑ دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہر شخص کو احتیاطی تدابیر پر عمل کرنا چاہیئے ورنہ آنے والے دنوں میں ایک بار پھر وائرس کا حملہ بڑھ سکتا ہے۔

گزشتہ 24 گھنٹوں میں کورونا کے 2711 نئے مریض سامنے آئے ہیں جبکہ 100 افراد جاں بحق ہوئے ہیں جس کے بعد مریضوں کی کل تعداد 2 لاکھ 8 ہزار 358 ہو گئی ہے جبکہ اموات کی تعداد 4254 ہو گئی ہے۔

پمز اسپتال کے میڈیا کوآرڈینیٹر ڈاکٹر وسیم خواجہ نے بتایا کہ ان کے اسپتال میں کورونا مریضوں کے لیے مختص کیے گئے 75 فیصد بستر خالی ہیں، 212 آکسیجن بیڈز اور 25 وینٹی لیٹرز موجود ہیں جبکہ صرف 10 مریض وینٹی لیٹرز پر موجود ہیں۔

سندھ میں ٹیسٹوں کی تعداد میں اضافہ ہونے کے باوجود کورونا مریضوں کی شرح میں واضح کمی دیکھنے میں آئی ہے، 27 اور 28 جون کو صوبہ بھر میں 11 ہزار اور 9144 ٹیسٹ کیے گئے۔

جون کے درمیان میں ٹیسٹوں کی اس تعداد کے نتیجے میں 7 ہزار کے قریب مریض روزانہ سامنے آ رہے تھے لیکن اب یہ شرح 40 فیصد کم ہو کر 4 ہزار تک پہنچ گئی ہے۔

ٹیگ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site