امریکہ میں 24 گھنٹوں کے دوران کورونا کے ریکارڈ نئے کیسز

امریکہ میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا کے 55 ہزار نئے کیسز سامنے آئے ہیں جو دنیا بھر میں ایک ہی دن میں رپورٹ ہونے والی سب سے بڑی تعداد ہے۔

 اس سے قبل برازیل میں 19 جون کو 54 ہزار 771 نئے مریض سامنے آئے تھے اور اب امریکہ میں 55 ہزار 274 کیسز کے ساتھ ایک نیا ریکارڈ سامنے آیا ہے۔

گزشتہ ایک ہفتے کے دوران امریکہ کی بیشتر ریاستوں میں کورونا کے کیسز میں نمایاں اضافہ ہوا ہے جس کے بعد امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ وبا سے نمٹنے میں ناکامی کے باعث شدید تنقید کی زد میں ہیں۔

امریکہ کی 50 ریاستوں میں سے 37 میں کورونا کیسز مسلسل بڑھ رہے ہیں، گزشتہ روز صرف فلوریڈا میں 10 ہزار کیسز سامنے آئے تھے جو ایک ہی دن میں کسی بھی امریکی ریاست اور یورپ کے کسی بھی ملک میں نئے مریضوں کی سب سے بڑی تعداد ہے۔

کورونا سے بچاؤ کی واحد دوا ریمڈیسویر پر امریکہ قابض ہو گیا

کورونا ویکسین پر پہلا حق کس کا ہوگا؟ امریکہ اور فرانس میں جھگڑا شروع

کورونا وبا کے خاتمے پر چین اور امریکہ کے درمیان سرد جنگ کے خطرات لہرانے لگے

اسی طرح کورونا کا نیا مرکز بننے والی دوسری ریاست کیلیفورنیا میں دو ہفتوں کے دوران ٹیسٹوں کے مثبت آنے کی شرح میں 37 فیصد اضافہ ہوا ہے جبکہ اسپتالوں میں داخل مریضوں کی تعداد میں 56 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

عالمی خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق امریکی ریاست ٹیکساس کے گورنر گریگ ایبٹ فیس ماسک کو لازمی قرار دینے کے خلاف تھے مگر اب انہوں نے بھی کورونا کے بڑھتے کیسز کے باعث اس کی پابندی لازمی قرار دے دی ہے۔

ٹیکساس میں گزشتہ روز کورونا کے 8 ہزار نئے کیسز سامنے آئے تھے، گورنر کا کہنا ہے کہ ہم وائرس کے پھیلاؤ کو بغیر لاک ڈاؤن کے روکنا چاہتے ہیں۔

وبا کی پہلی لہر

امریکہ میں اب تک کورونا کے باعث ایک لاکھ 29 ہزار افراد موت کا شکار ہو چکے ہیں جبکہ مریضوں کی تعداد 27 لاکھ 40 ہزار سے زائد ہو چکی ہے۔

کیلیفورنیا کے گورنر گیون نیوسم کا کہنا ہے کہ ابھی ہم کورونا کی پہلی لہر کا سامنا کر رہے ہیں، اس سے نمٹنے کے لیے انفرادی ذمہ داری پورا کرنے کی ضرورت ہے۔

اسی طرح کینسس کی ریاست میں بھی کورونا مریضوں کی تعداد میں 46 فیصد اضافے کے بعد فیس ماسک پہننا لازمی قرار دے دیا گیا ہے۔

لاک ڈاؤن اور بیروزگاری

وبا کے ابتدائی دنوں میں لگایا جانے والا بھرپور لاک ڈاؤن معیشت کی تباہی کا سبب بن گیا تھا جس کی وجہ سے ریاستوں کے گورنر دوبارہ یہ فیصلہ لینے سے ہکچکا رہے ہیں۔

یو ایس لیبر ڈیپارٹمنٹ کی رپورٹ کے مطابق لاک ڈاؤن نرم کرنے کے بعد جون کے دوران لوگوں کو ملازمتیں ملنے کی شرح میں ریکارڈ اضافہ دیکھا گیا ہے۔ اس کے باوجود اس وقت وبا سے پہلے کے دور کے مقابلے میں ایک کروڑ 47 لاکھ ملازمتیں کم ہیں۔

امریکی صدر ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس میں رپورٹرز کو بتایا کہ لوگوں کو ملازمتیں ملنا اس بات کا ثبوت ہے کہ ہماری معیشت دوبارہ سے اٹھ رہی ہے۔

لیکن ٹرمپ کے انتخابی حریف جو بائیڈن نے ان پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈیڑھ کروڑ امریکی اس وقت بھی کام سے محروم ہیں، ٹرمپ کو چاہیئے کہ وہ فتح کا اعلان کرنا چھوڑ دیں۔

گزشتہ ہفتے صدر ٹرمپ کی ٹلسا میں ہونے والی ریلی میں شرکت کرنے والے صدارتی امیدوار ہرمین کین بھی کورونا کا شکار ہونے کے بعد اسپتال داخل ہو گئے ہیں۔

اس انتخابی ریلی کا انتظام سنبھالنے والے اسٹاف کے 8 ارکان کورونا میں مبتلاء ہو گئے ہیں۔

ٹیگ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site