روزویلٹ ہوٹل کا معاملہ، نجکاری کمیشن بورڈ کا وفاقی کابینہ کا فیصلہ ماننے سے انکار

نجکاری کمیشن بورڈ کے اراکین نے ایک ہفتے میں دوسری مرتبہ مشترکہ منصوبے کے تحت روز ویلٹ ہوٹل کو لیز پر دینے کے بارے میں وفاقی کابینہ کا فیصلے ماننے سے انکار دیا اور پہلے تھرڈ پارٹی سے رائے لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

وفاقی وزیر نجکاری محمد میاں سومرو کی زیر صدارت بدھ کے روز نجکاری کمیشن بورڈ کا اجلاس منعقد ہوا جس میں متعدد فیصلے کیے گئے ۔

امریکی صدر بھی پی آئی اے کا ہوٹل روزویلٹ خریدنے کے خواہشمند نکلے

پی آئی اے میں میرٹ پر ٹھیکے نہیں دیے جاتے، سپریم کورٹ

نجکاری کمیشن بورڈ ذرائع کے مطابق اجلاس میں روزویلٹ ہوٹل نیویارک کے معاملے پر تفصیل سے تبادلہ خیال کیا گیا جس میں اس بات کا جائزہ لیا گیا کہ بورڈ کو وفاقی کابینہ کی ہدایت کو قبول کرنا چاہیے یا ہوٹل نجکاری کا موزوں طریقہ کار طے کرنے کے لیے مالی مشیر سے رائے لی جائے ۔

بورڈ ممبران کا موقف تھا کہ کابینہ کے ہوٹل کو مشترکہ لیز پر دینے کے فیصلے سے مالی مشیر کا کردار محدود ہو جاتا ہے، ان کا کہنا تھا کہ لیز نجکاری کے بہت سے طریقوں میں سے ایک ہے ۔

اس موقع پر بورڈ نے فیصلہ کیا کہ وہ کابینہ کے فیصلے پر اپنی منظوری کی مہر ثبت نہیں کرے گا اور اس کے بجائے مالیاتی مشیر کی خدمات حاصل کر کے اس کی سفارشات کا انتظار کرے گا۔ نجکاری کمیشن بورڈ کے فیصلے سے مستقبل میں کسی بھی ممکنہ تفتیش سے نجات ملے گی کیونکہ نجکاری آرڈیننس اور ضوابط کے تحت نجکاری کے لین دین کا طریقہ کار بورڈ کو طے کرنا ہوتا ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ سال نومبر میں مسابقتی کمیشن آف پاکستان نے ہوٹل کی نجکاری کے لیے کابینہ ٹاسک فورس تشکیل دی تھی لیکن اسے 2جولائی کو ٹاسک فورس کو ڈی نوٹیفائی کرنا پڑا کیونکہ یہ نجکاری آرڈیننس 2000 کی خلاف ورزی ہے ۔

ٹیگ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site