یو اے ای سے معاہدے کے ایک روز بعد ہی اسرائیلی وزیراعظم اپنی زبان سے پھر گئے

اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے متحدہ امارات کے ساتھ معاہدے کے اگلے روز ہی یوٹرن لیتے ہوئے مغربی کنارے کو اسرائیل میں ضم کرنے کا منصوبہ ختم نہ کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات کے ساتھ ہونے والے معاہدے کے تحت مغربی کنارے کو اسرائیل کا حصہ بنانے کے منصوبے میں تاخیر تو ہو سکتی ہے مگر یہ اب بھی موجود ہے۔

ٹی وی خطاب میں نیتن یاہو نے کہا کہ انہوں نے اس منصوبے میں تاخیر پر رضامندی کا اظہار کیا تھا، ہم اپنی زمین اور حقوق کے معاملے پر کبھی پیچھے نہیں ہٹیں گے۔

انہوں نے کہا کہ اپنی خودمختاری کو وسیع کرنے کے منصوبے میں کوئی تبدیلی نہیں آئی، ہماری خودمختاری کی حدود جوڈیا اور سماریہ (مغربی کنارہ) تک ہیں اور اس میں ہمیں امریکہ کا مکمل تعاون حاصل ہے۔

اس دوران یو اے ای کے رہنما شیخ محمد بن زید النیہان نے اپنے ایک ٹویٹ میں کہا کہ یہ معاہدہ طے پایا تھا کہ اسرائیل فلسطینیوں کی مزید زمین اسرائیل کا حصہ نہیں بنائے گا۔

اسرائیل کا دعویٰ ہے کہ مغربی کنارہ یہودیوں کی تاریخی سرزمین کا حصہ ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اسرائیل اور یو اے ای کے درمیان معاہدے کا اعلان کیا تھا۔

اسرائیل اور یو اے ای کے مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا تھا کہ یہ تاریخی سفارتی پیش رفت مشرق وسطیٰ میں امن کا عمل آگے بڑھائے گی، آنے والے ہفتوں میں اسرائیل اور یو اے ای کے وفود کے درمیان ملاقات ہو گی جس میں سرمایہ کاری، سیاحت، براہ راست پروازیں، سیکیورٹی، ٹیلی کمیونیکیشن اور دیگر معاملات پر معاہدے کیے جائیں گے۔

معاہدے میں یہ بھی طے کیا گیا تھا کہ اسرائیل مزید فلسطینی علاقے ضم نہیں کرے گا، دو طرفہ تعلقات کے لیے دونوں ممالک مل کر روڈ میپ بنائیں گے۔

ٹیگ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

We are working hard for keeping this site online and only showing these promotions to get some earning. Please turn off adBlocker to continue visiting this site
یو اے ای سے معاہدے کے ایک روز بعد ہی اسرائیلی وزیراعظم اپنی زبان سے پھر گئے is highly popular post having 1 Twitter shares
Share with your friends
Powered by ESSB